Month: May 2020

تیرے اندر کی جستجو تیرے اندر ہی تو جلی ہے

تیرے اندر کی جستجو تیرے اندر ہی تو جلی ہےیہ سلگتی ہوئی آگ تو نے خود ہی تو دبئی ہے ویراں خزاں ماتمِ دل کا گلہ کس سےیہ کسوٹی تو نے خود ہی تو لڑی ہے خلوتِ دنیا کی حقیقت تیرے روبرو ہےیہ زیرِ رسائی تو نے خود ہی تو چنی ہے بے قراری کی …

تیرے اندر کی جستجو تیرے اندر ہی تو جلی ہے Read More »

خوشی کی محفل اب پرائی سی لگتی ہے

خوشی کی محفل اب پرائی سی لگتی ہےمجھے اپنی کہانی اب ٹھکرائی سی لگتی ہے خوابوں کی چادر اوڑھے نیند آوریاندیشہ زوال کا منظر دکھائی سی لگتی ہے منزلِ وفا کو پل پل کھوجتی راہبے وفائی سے قدم تھکائی سی لگتی ہے دل کی چوکھٹ پر ناسوری وار دیکھ کرلبوں پر مسکراہٹ روسیاہی سی لگتی …

خوشی کی محفل اب پرائی سی لگتی ہے Read More »

پردیس میں دیس

پردیس میں دیس رمضان المبارک کی آمد ہمارے اندر ایک نیا جوش و جذبہ ابھارتی ہے. لیکن اس سال احساسات کچھ مختلف تھے کیوں کہ اس بار رمضان ہمیشہ کی طرح گھر والوں کے ساتھ نہیں بلکہ پردیس میں گزرنا تھا. اکیلے پن کا خیال ستا رہا تھا کہ یہاں اپنے پاکستانی دوستوں کے ساتھ …

پردیس میں دیس Read More »

ذرا سوچو تو! ایسا ہوتا تو کیسا ہوتا

ہم چاہتے جیسا جیسا سب ویسا ویسا ہوتاذرا سوچو تو ایسا ہوتا تو کیسا ہوتا ابتدا سے لے کر اب تک وجود دنیا کی یہ حقیقت ہے کہ یہاں چاہنے اور پانے کی جنگ دستور عام رہی ہے اور بلا کسی روک تھام کے یہ جنگ عظیم تا قیامت تک چلتی رہے گی۔ انسانی نفس …

ذرا سوچو تو! ایسا ہوتا تو کیسا ہوتا Read More »