160

پردیس میں دیس

پردیس میں دیس

رمضان المبارک کی آمد ہمارے اندر ایک نیا جوش و جذبہ ابھارتی ہے. لیکن اس سال احساسات کچھ مختلف تھے کیوں کہ اس بار رمضان ہمیشہ کی طرح گھر والوں کے ساتھ نہیں بلکہ پردیس میں گزرنا تھا. اکیلے پن کا خیال ستا رہا تھا کہ یہاں اپنے پاکستانی دوستوں کے ساتھ بھی سحر و افطار کا وقت نہیں گزار سکتے کیوں کہ احتیاط کرنے میں ہی بقا ہے. بس یہ سوچ کر دل کو تسلی رہی کہ یہ مشکل وقت بھی گزر ہی جائےگا.

شب و روز گزرتے گزرتے ایک عشرا  بیت گیا. ایک دن اپنے کچھ عرب دوستوں کو افطار کے وقت اکٹھا دیکھ کر خیال آیا کہ احتیاطی تدابیر کے ساتھ مناسب فاصلہ رکھ کے کسی شام ہم بھی وقت ساتھ گزار سکتے ہیں. چناچہ اپنی ایک سینئر کو کال کر کے  تجویز دی. انھوں نے پھر سب کو اگلی شام ایک ساتھ افطار کرنے کا مسج بھیجا اور سبھی نے ہامی بھر لی.
اگلی افطار کی شام ہم سب لان میں جمع ہو گئے. مل جل کر دسترخوان لگایا اور مناسب فاصلہ رکھتے ہوئے ارد گرد بیٹھ گئے. گپ شب اور ہنسی مزاک کہ ساتھ افطار کا لطف لیا اور یوں گھر کی یاد بھی تازہ ہو گئ.

طاہرہ عبداللہ
Latest posts by طاہرہ عبداللہ (see all)

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

2 تبصرے “پردیس میں دیس

  1. This is a very good tips especially to those new to blogosphere, brief and accurate information… Thanks for sharing this one. A must read article.

اپنا تبصرہ بھیجیں